مصروف ترین ریلوے اسٹیشن ماضی کی داستان بن گیا

ماضی کا مصروف ترین سمہ سٹہ ریلوے جنکشن جہاں کبھی ہر وقت گزرنے والی ٹرینوں کا شور ہوا کرتا تھا آج وہاں خاموشی ہے ۔ جنکشن سے ملحقہ ریلوے کالونی کی رونقیں بھی روٹھ گئیں۔


ریل کا پہیہ لوریاں سناتا جاتا ہے اور سمہ سٹہ کا ریلوے اسٹیشن گئی رتوں کی کہانیاں ۔ واضح رہے کہ اس جنکشن کے قیام کا مقصد ریل گاڑیوں کی مرمت اور دیکھ بھال تھا۔

بد قسمتی سے جب حکومت میں اس ریلوے سٹیشن کو آمدنی اور پیسے کے حوالے سے دیکھنا شروع کردیا تو یہ تباہی کا شکار ہونا شروع ہوگیا ۔

بڑے بڑے خوبصورت گنبد اس کے ماضی کی داستان بیان کررہے ہیں مگر اب یہ عہد رفتہ کا تماشہ بن چکا ہے۔

وقت کے تھپیڑے کھانے کے باوجود سمہ سٹہ کا ریلوے سٹیشن تو کسی نہ کسی طرح آج بھی اپنی جگہ ڈٹا ہوا ہے لیکن اس سے ملحقہ ریلوے کالونی اب دم توڑ چکی ہے ۔ ٹوٹی دیواروں اور وحشتوں کے راج کے ساتھ کالونی اب اجڑے دیار میں تبدیل ہوچکی ہے۔ یہاں سے رونقیں بھی اپنے مکینوں کے ساتھ ہجرت کرگئیں ۔

یہاں تقریباً پندرہ سو گھر تھے، لیکن اب مشکل سے تین سو گھر بچے ہیں، کوئی گھر مکمل طور ٹھیک نہیں ہے ۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎