بیس سال بعد نواز شریف کیخلاف فراڈ کے مقدمہ کے لیے دائر درخواست پر فیصلہ سنا دیا گیا

عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف فراڈ کا مقدمہ درج کرنے کی شہری کی درخواست مسترد کردی۔


ایڈیشنل سیشن جج محمد فیاض الحسن نے شہری فیصل نصیر کی درخواست پر سماعت کی۔

قرض اتارو ملک سنوارو سکیم میں ایک لاکھ روپے جمع کرانے پرمیری رقم کو درست استعمال نہیں کیا گیا ،شہری کی جانب سے20 سال بعد سابق وزیر اعظم میاں محمدنواز شریف کے خلاف مبینہ طور پرفراڈ کرنے کی اندراج مقدمہ کی درخواست سیشن عدالت نے مسترد کردی۔

درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف نے1997/98 میں قرضہ اتارو ملک سنوارو سکیم کا اغاز کیا تھا،اس نے بحیثیت پاکستانی سکیم کے لئے ایک لاکھ روپے جمع کروائے تھے

 میاں نواز شریف اور ان کے اہلحانہ نے شہریوں کے پیسوں کو مبینہ ذاتی طور پر استعمال کیا ،قرض اتاروسکیم کے تحت شہریوں کو لوٹا گیا.

عدالت سے استدعا ہے کہ عدالت سابق وزیر اعظم نواز شریف اور ان کے اہلحانہ کے خلاف فراڈ کا مقدمہ درج کرے،عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف فراڈ کا مقدمہ درج کرنے کی شہری کی درخواست مسترد کردی۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎