وزیراعظم کے خلاف نیب مقدمات پر چیئر مین نیب کا موقف بھی آگیا ،بڑا اعلان کرد یا

چیئر مین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا ہے کہ اگر قائد حزب اختلاف نیب کے سامنے پیش ہو سکتے ہیں تو وزیر اعظم کو کوئی استحقاق نہیں کہ وہ نیب کی کارروائی کا سامنا نہ کریں.


ان کا کہنا ہے کہ نیب کیس سے وزیراعظم کی توہین نہیں بلکہ ان کی عزت میں اضافہ ہوا.

جنہوں نے نیب کیس کو وزیراعظم کی توہین کہا وہ بہت سادہ لوگ ہیں.

 

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں قانون اور آئین کی حکومت ہے، نیب پر کبھی دباؤ نہیں آیا کہ قائد ایوان کے ساتھ نرمی برتیں جبکہ قائد حزب اختلاف اگر نیب کے سامنے پیش ہو سکتا ہے تو وزیر اعظم کو کوئی استحقاق نہیں کہ وہ نیب کی کارروائی کا سامنا نہ کرے۔

چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ بیورو کا احتساب اسی دن شروع ہو جاتا ہے جب کسی کو ریمانڈ کے لیے عدالت میں لے جاتے ہیں، ریمانڈ تو عدالتیں دیتی ہیں لیکن وہ بھی پیش کردہ شواہد اور تفتیش کی روشنی میں ملتا ہے، کبھی ایسی بات نہیں ہو گی جس میں کسی سے انتقام یا زیادتی کا مسئلہ ہو گا۔

ان کا کہنا تھا کہ نیب کا تعلق کسی گروہ، سیاسی جماعت یا کسی حکومت کے ساتھ نہیں ہے، نیب کی وفاداری صرف اور صرف پاکستان اور پا کستان کی عوام کے ساتھ ہے، اگر کسی سے جرم سرزد ہوا ہے تو اس کی کارروائی قانون کے مطابق ہو گی اور نیب کو کوئی قانونی کارروائی سے روک نہیں سکتا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎