چیف جسٹس نے جاتے جاتے ایسا شاندار کام کر دیا کہ والدین خوشی سے جھوم اٹھیں گے

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے 5 ہزار سے زائد فیسیں وصول کرنے والے نجی اسکولوں کی فیسوں میں 20 فیصد کمی کا تحریری حکمنامہ جاری کردیا۔


فیسوں کی کمی کے حکم کا اطلاق 5 ہزار سے زائد فیسیں وصول کرنے والے ملک بھر کے تمام اسکولوں پر ہوگا. 

اعلیٰ عدالت کے فیصلے کے مطابق 5 ہزار سے کم فیس وصول کرنے والے نجی تعلیمی ادارے 20 فیصد کمی سے مستثنیٰ ہوں گے۔

سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق 20 فیصد کمی کے حکم کا اطلاق ملک بھر کے تمام اُن اسکولوں پر ہوگا جو 5 ہزار سے زائد فیسیں وصول کر رہے ہیں۔

سپریم کورٹ نے فیصلے میں ہدایت کی ہے کہ طلبہ اور والدین کم فیس جمع کرائیں اور والدین اسکول کی فیس مقررہ وقت تک ادا کریں۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ فیسوں پر کمی سے اسکالر شپس اور اسکول کی سہولیات پر کوئی فرق نہیں پڑے گا، اسکول مالکان اساتذہ کی تنخواہوں میں کوئی کمی نہیں کریں گے۔

سپریم کورٹ کے فیصلے میں کہا گیا کہ اس ملک میں قانون اور عدالتی احکامات کی خلاف ورزی نہیں کر سکتے، نجی اسکولوں نے عدالتی حکم کے بارے میں والدین کو تضحیک آمیز خطوط لکھے، جن اسکولوں نے تضحیک آمیز خطوط لکھے ان کو نوٹس جاری کرتے ہیں، وہ اسکول وضاحت کریں کہ کیوں نہ ان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے۔

تحریری فیصلے میں سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ ایف آئی اے اسکولوں کے قبضے میں لئے گئے ریکارڈ کاپی کرکے واپس کرے۔

سپریم کورٹ کے فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ لاء اینڈ جسٹس کمیشن نے تعلیمی اصلاحات پر رپورٹ اپنی ویب سائیٹ پر نمایاں کی ہے جس پر متعلقہ افراد کی تجاویز آرہی ہیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎