عدالت نے شہباز شریف کے بعد( ن) لیگ کے ایک اور اہم رہنماء کو رہا کرنے کا حکم دے دیا

عدالت نے ملزم فواد حسن فواد کو آشیانہ اقبال اسکیم کیس میں ضمانت پر رہا ئی کا حکم دے دیا ہے۔ 


 میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے 2 رکنی بنچ نے سابق وزیراعلیٰ شہبازشریف اور فواد حسن فواد کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔

 سماعت کے دوران جسٹس ملک شہزاد نے ریمارکس دیے کہ اگر نیب کا مئوقف مان لیا جائے تو کوئی ایم این اے یا پھر ایم پی اے علاقوں میں ترقیاتی کام نہیں کروائے گا۔ جبکہ رمضان شوگرمل کیس میں شہبازشریف کبھی بھی سی ای او نہیں رہے۔

لاہور ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم کے پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد کو آشیانہ کیس میں رہا کرنے کا حکم دے دیا، عدالت نے فواد حسن فواد کی آشیانہ کیس میں ضمانت منظور کرلی جبکہ آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں درخواست ضمانت مسترد کردی ہے۔

 دوسری جانب مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کی ضمانت پر اپنے ردعمل میں کہا کہ اللہ پاک کا شکر ادا کرتے ہیں،کہ ہمیں انصاف ملا ہے۔

نیب کا کردار کھل کر سامنے آگیا ہے۔ شہبازشریف کو صاف پانی کیس میں بلا کر آشیانہ میں گرفتار کرلیا گیا۔اسی دوران ان کیخلاف رمضان کیس کا شوشہ چھوڑ دیا۔ دونوں کیسز میں شہبازشریف سرخرو ہوئے ہیں۔نیب شہبازشریف کیخلاف ایک پائی کی کرپشن ثابت نہیں کرسکا،وہ لوگ جو صبح شام چور چور اور ڈاکو ڈاکو کے نعرے لگاتے تھے ان کیلئے ماتم کا دن ہے۔جبکہ ن لیگ کے کارکنان کیلئے حق سچ کا دن ہے۔ایوان میں ہماری پوزیشن پہلے بھی مضبوط تھی، شہبازشریف نے جب کارکردگی پر سوال اٹھایا تو انہوں نے شہبازشریف کو پی اے سی سے ہٹانے کی باتیں شروع کردیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎