علاج کیلئے جناح ہسپتال جانا پسند نہیں۔۔۔نوا ز شریف کی بڑی خواہش سامنے آگئی

جیل ذرائع کے مطابق نواز شریف اسپتال جانے کے لیے راضی نہیں تھے اور نواز شریف چاہتے ہیں کہ ان کا علاج جیل میں ہی ہو یا پھر لندن میں پہلے والے معالج کے پاس ہو جن سے وہ پہلے علاج کروا چکے ہیں۔


سابق وزیراعظم نواز شریف کو آج جناح اسپتال منتقل کر دیا گیا جہاں ان کے لیے ایک وی وی آئی پی کمرہ تیار کیا گیا ہے جہاں انہیں رکھا جائے۔ نواز شریف کو جیل حکام نے نہایت سخت سکیورٹی میں اسپتال منتقل کیا۔ 

سابق وزیراعظم نواز شریف کے جناح اسپتال میں علاج کے لیے اسپتال کی دوسری منزل پر کارڈیو واسکولر سرجری وارڈ میں کمرہ تیار کیا گیا ہے۔

 سابق وزیراعظم کے کمرے کے باہر جیل عملہ تعنیات ہوگا، کمرے میں صرف اہل خانہ کو جانے کی اجازت ہو گی۔

جیل ذرائع نے بتایا کہ جناح اسپتال روانگی سے قبل ڈاکٹرز نے سابق وزیراعظم نواز شریف کا طبی معائنہ کیا ۔ نواز شریف کے بلڈ پریشر اور شوگر سمیت دیگر ٹیسٹ کیے گئے جب کہ نواز شریف کو آج بھی ہلکا بخار ہے۔ 

محکمہ داخلہ کے مطابق نواز شریف کو فول پروف سکیورٹی فراہم کی جائے گی

نواز شریف کی اسپتال منتقلی کے لئے پولیس سکیورٹی پلان بھی تشکیل دے دیا گیا ہے۔ اسپتال میں تین شفٹوں میں اہلکار تعینات کیے جائیں گے، ایک ڈی ایس پی، 2 انسپکٹر اور 80 اہلکار ایک شفٹ میں ہوں گے، ایلیٹ فورس اور سادہ لباس میں الگ الگ نفری تعینات ہوگی۔ سکیورٹی کے انچارج ایس پی ماڈل ٹاؤن علی وسیم ہوں گے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎