نواز شریف کی صحت کے متعلق اہم خبر،سابق وزیراعظم کی تھیلیم اسکین رپورٹ منظرعام پرآگئی

ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم کے پی آئی سی میں لئے گئے تھیلیم اسکین کی رپورٹ آگئی ہے،ڈاکٹروں نے ان کی تھیلیم اسکین کو غیر تسلی بخش قرار دے دیا۔


سابق وزیراعظم نواز شریف کے تھیلیم اسکین کو ڈاکٹروں نے غیر تسلی بخش قرار دے دیا ہے۔

نوازشریف کو 22 جنوری کو انجیوگرافی کےلئے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی لایا گیا،جہاں ان کا صرف تھیلیم ٹیسٹ کیا گیا۔

جناح اسپتال کے میڈیکل بورڈ نے کوٹ لکھپت میں قید نواز شریف کی انجیوگرافی کی تجویز دی تھی۔

رپورٹ کے مطابق نواز شریف کی دل کی ایک شریان معمول سے زیادہ تنگ ہے،شریان میں رکاوٹ کےباعث دل کےنچلےحصےمیں خون کی سپلائی متاثر ہے۔

16جنوری کو جناح اور پی آئی سی اسپتال کے ڈاکٹرز پر مشتمل میڈیکل بورڈنےنواز شریف کا کوٹ لکھپت جیل میں طبی معائنہ کیاتھا اور خون کے نمونے لیے تھے۔

خون کی رپورٹ کے مطابق جناح اسپتال کے ہیڈآف میڈیسن ڈیپارٹمنٹ پروفیسر تنویر الاسلام نے انجیوگرافی کا مشورہ دیاتھا۔

نواز شریف کو22 جنوری کو انجیو گرافی کیلیے پنجاب انسٹیٹوٹ آف کارڈیالوجی لایا گیا تھا،پی آئی سی میں نواز شریف کا صرف تھیلیم ٹیسٹ کیا گیا۔

ذرائع کادعوی ہے کہ اسپتال انتظامیہ نے دباؤ اور سیکیورٹی وجوہات پر صرف تھیلیم ٹیسٹ کروایا،اگر انجیوگرافی ہوتی تو نواز شریف کو چند گھنٹے اسپتال میں رکھنا ضروری تھا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎