حکومت نے سرکاری ملازمین کے احتساب کے لیے بڑا منصوبہ بنا لیا

سرکاری افسر ہوشیار ہوجائیں، اختیارات کا ناجائز استعمال مہنگا پڑگیا، پنجاب حکومت سرکاری افسران کے احتساب کے لیے آزاد کمیشن بنا رہی ہے۔


پنجاب حکومت نے سرکاری افسران اور ملازمین کے احتساب کے لیے آزاد اور خود مختار کمیشن بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

یہ کمیشن اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے والے افسران کو سزائیں بھی دے سکے گا، کمیشن کےبل کا مسودہ اسپیشل کمیٹی نمبر ون کے سپرد بھی کردیا گیا۔

جو نہ صرف تحقیقات کرے گا بلکہ سزا کا تعین بھی کرے گا۔

کونفلیکٹ آف انٹرسٹ ایکٹ 2018ء کے تحت بننے والا یہ کمیشن سرکاری افسران کے فرائض اور نجی مفادات کے فرق واضح کرے گا۔

کمیشن ایک چیئرمین اور دو ممبران پر مشتمل ہوگا،اس کاچیئرمین وہ شخص ہو گا جو ہائی کورٹ کا جج بننے کا اہل ہو گا جبکہ ممبران میں ایک گریڈ 20 کا ریٹائرڈ سول سرونٹ جبکہ دوسرا فنانشل مینجمنٹ کا ماہر ہوگا۔

کوئی بھی شہری فرائض سے ہٹ کر اختیارات کے استعمال پر سرکاری افسران کے خلاف کمیشن میں شکایت درج کراسکے گا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎