حکومت کا منی بجٹ پیش کرنے کا اعلان، عوام کو کیا ریلیف ملنے والا ہے؟

وزیر خزانہ اسد عمر نے اعلان کیے ہے کہ وفاقی حکومت 23 جنوری کو منی بجٹ پیش کرے گی۔ 


ایف بی آر کے ایس آر او کے اجرا کا اختیار ختم کر دیا گیا ہے، منی بجٹ میں ٹیکس پیچیدگیاں دور کی جائیں گی۔

کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں تاجروں سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وفاقی بورڈ آف ریوینیو (ایف بی آر) کو اسٹیچوٹیری ریگولیٹری آرڈرز (ایس آر او) کے اجرا کا اختیار ختم کردیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ٹیکسز پالیسی میں کسی قسم کی تبدیلی پارلیمنٹ سے منظوری کے بعد ہوگی۔

اسد عمر نے بتایا کہ وفاقی حکومت فی الحال آئی ایم ایف کے پاس نہیں جارہی بلکہ آئی ایم ایف کے علاوہ دیگر راستے دیکھ رہے ہیں۔

چیمبر آف کامرس کے اراکین سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ میں خود بھی کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسڑی کا ممبر رہا ہوں اور یہ میرا گھر ہے۔

انہوں نے کہا کہ 21ویں صدی میں معیشت کا پہیہ نجی شعبہ چلاتا ہے اور اس کے لیے ہم تجارت کو آسان بنانے کی کوششیں کررہے ہیں اور کئی اقدامات کیے جارہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم پاکستان میں کاروبار کرنے میں آسانیوں کی رینکنگ میں 147 سے 136 تک آگئے ہیں اور اسے 100 سے کم میں لے کر جانا چاہتے ہیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎