شہبازشریف کے پروڈکشن آرڈر منسوخ کیے جانے کی صورت میں ن لیگ نے اینٹ سے اینٹ بجانے کا اندیہ دے دیا

مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، خواجہ آصف اور مریم اورنگزیب نے اسلام آباد میں مشترکہ نیوز کانفرنس کی۔


اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) نے وزیراعظم کے مشیر نعیم الحق کی جانب سے شہبازشریف کے پروڈکشن آرڈر منسوخ کیے جانے کے اشارے پر سخت رد عمل کا اظہار کیاہے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ اس ایوان میں حکومت کا رویہ سب کے سامنے ہے، وزیراعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق نے تین ٹوئٹ کیے اور دھمکیاں دیں لہٰذا لیڈر آف اپوزیشن ایوان میں نہیں آئے گا تو لیڈر آف ہاؤس بھی نہیں آئے گا۔

انہوں نے کہا کہ آج حکومت والے خود پارلیمنٹ اور اپوزیشن کو دھمکیاں دے رہے ہیں، یہ معاملہ آج ایوان میں اٹھانا چاہتے تھے لیکن اسپیکر نے اجازت نہیں دی، ملک کا وزیراعظم پارلیمنٹ کو نہتا کررہاہے، ہم نے اپنی شکایت اسپیکر چیمبر میں جاکر پیش کردی ہے۔

اس موقع پر خواجہ آصف نے کہا کہ نعیم الحق جو الفاظ استعمال کررہے ہیں یہ وزیراعظم کی زبان ہے، پہلے بھی یہ جو کچھ کرتے رہے سب کو معلوم ہے اور یہ کچھ کرنا چاہتے ہیں تو ہم بھی تیار ہیں، ہم چاہتے ہیں پارلیمنٹ کی توقیر ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم 6 ماہ بعد آئے اور ناراض ہوکر چلے گئے، ہم تو وزیراعظم کا تلاش گمشدہ کا اشتہار دینے لگے تھے کہ وہ اچانک آگئے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎