پاکستان کے اہم ترین باؤلر کی ورلڈ کپ میں شمولیت پر سوالیہ نشان لگ گیا

 ایسا لگ رہا ہے کہ اگر عامر نے اپنی کارکردگی بہتر نہ بنائی تو وہ انگلینڈ میں شیڈول ورلڈ کپ کے لیے قومی سکواڈ کا حصہ نہیں بن پائیں گے


گزشتہ ایک سال سے ون ڈے فارمیٹ میں مسلسل خراب کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کے بعد فاسٹ باﺅلر محمد عامر کے پاکستانی ون ڈے ٹیم میں جگہ برقرار رکھنا مشکل سے مشکل ہوتا جارہا ہے اور اب ان کی جگہ جنید خان ون ڈے ٹیم میں شامل ہونے کے مضبوط امیدوار ہیں، ایسا لگ رہا ہے

محمد عامر نے جنوبی افریقہ کےخلاف3 ون ڈے میچز میں 51کی اوسط سے 2 شکار کیے اور انکا اکانومی ریٹ4.63 رہا۔

2017 ءمیں چیمپئنز ٹرافی کے فائنل میں بھارت کے خلاف تین وکٹوں کے شاندار سپیل کے بعد سے عامر آخری 10 ون ڈے میں صرف تین شکار کرسکے ہیں اور پروٹیز کے خلاف سیریز سے قبل آخری 5 ون ڈے میچز میں وہ ایک بھی وکٹ نہیں لے سکے تھے ۔

پروٹیز کے خلاف سیریز کے دوران ٹیم انتظامیہ نے ایک بار پھر یہی بات نوٹ کی کہ عامر کی رفتار بھی پہلے سے بہت کم ہوچکی ہے اور وہ رائٹ ہینڈ بلے باز کو ان سوئنگ کروانے میں بھی ناکام رہے ہیں جب کہ ان کی جگہ ایشیاءکپ کھیلنے والے جنید خان نے اس ایونٹ میں عمدہ باﺅلنگ کا مظاہرہ کیا تھا تاہم نیوزی لینڈ کے خلاف ون ڈے سیریز سے قبل وہ ان فٹ ہوکر ٹیم سے باہر ہوئے ،جنید خان بنگلا دیش پریمیئر لیگ میں اچھی رفتار اور ردھم کے ساتھ باﺅلنگ کر رہے ہیں اور 6میچز میں 11شکار کرچکے ہیں ، پاکستان کی اگلی سیریز مارچ کے آخر میں ہو گی اور اس سے قبل پاکستان سپر لیگ میں عامر کی فارم اور فٹنس ان کے ون ڈ ے فارمیٹ میں مستقبل کا فیصلہ کرے گی۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎