دن رات عمران خان کی تعریف کرنیوالا شخص ان کیخلاف بول اُٹھا

اس بات میں کوئی شک نہیں کہ عمران خانکے چاہنے والوں کی تعداد لاکھوں میں ہے۔ اور یہی وجہ ہے کہ وہ کئی سالوں سے عمران خان کی اس جدو جہد میں شامل تھے۔عمران خان کے چاہنے والوں نے ان کے ساتھ دھرنے دئیے اور ہر مشکل کا مقابلہ کیا۔ اس 22 سالہ جدوجہد میں عمران خان کے ساتھ ساتھ ان کے کارکنان نے بھی بے شمار مشکلات دیکھیں ۔اس سفر میں میڈیا اور سینئیر تجزیہ نگاروں نے بھی عمران خان کی خوب حمایت کی.انہی میں سینیئر تجزیہ نگار ہارون الرشید بھی شامل ہیں جن کا کہنا ہے کہ عمران خان کسی کی سپورٹ کی وجہ سے اقتدار میں آئے ہیں۔ تاہم عمران خان کے اقتدار میں آنے کے بعدعمران خان کے یہی حمایتی اب کھل کر ان کی مخافت کرتے ہیں۔


سینئیر صحافی ہارون الرشید کا دوران پروگرام گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان تو اقتدار میں آ ہی نہیں سکتے تھے۔ان کا کہنا تھا کہ اگر عمران خان کو محکمہ زراعت کی حمایت حاصل نہ ہوتی تو ان کے اقتدار میں آنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہو تا تھا.

اسی پر تبصرہ کرتے ہوئے معروف صحافی رضا رومی کا کہنا تھا کہ کہ یہ بیان دینے والے کوئی سیاسی مخلاف یا پر غدار لبرل نہیں ہیں بلکہ یہ عمران خان کے سب سے بڑے حمایتی ہیں۔یہاں پر سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ آخر کیا وجہ ہے کہ عمران خان کے حمایتی ایک دم ان سے نالاں ہو گئے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎