پبلک اکا ئونٹس کمیٹی کا چیئرمین بننے کی خوشی زیادہ دیر نہ رہ سکی، شہباز شریف کے لیے بری خبرآگئی

 قائد حزب اختلاف محمد شہباز شریف کو پبلک اکا ئونٹس کمیٹی کا چیئرمین بنانے کے اقدام کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا گیا


درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ کرپشن کے الزامات میں گرفتار ملزم کو کمیٹی کا چیئر مین نہیں بنایا جاسکتا۔

درخواست میں وزیر اعظم ، وفاقی حکومت ،اسپیکر قومی اسمبلی اورالیکشن کمیشن کو فریق بنایا گیا ہے۔

 درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت شہباز شریف کو چیئرمین پبلک اکاونٹس کمیٹی بنانے کے اقدام کوکالعدم قرار دے۔

شہباز شریف بطور چیئرمین پبلک اکائونٹس کمیٹی نیب ،ایف آئی اے اوردیگر اداروں کو طلب کرکے دبائو میں لاسکتے ہیں۔قومی اسمبلی رولز کے تحت کرپشن میں ملوث شخص کو چیئرمین نہیں لگایا جاسکتا۔درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ احتساب کا عمل شفافیت کی بنیاد پر انجام دیا جاسکتا ہے

شہباز شریف نیب اور دیگر احتساب کرنے والے اداروں کی بے توقیری کرتے ہیں۔ قومی اسمبلی کے رولز میں موجودہ حالات کی مناسبت سے ترامیم کی جانی ۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎