لیگی رہنما کا ن لیگ چھوڑنے کے بعد حکومتی جماعت سے رابطہ

 وسیم قادر کی جانب سے مسلم لیگ ن چھوڑنے کے بعد پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کے لیے رابطہ کیا گیا ہے۔ ڈپٹی مئیر وسیم قادر کی جلد سینئر صوبائی وزیر عبدالعلیم ملاقات کا امکان ہے۔ ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی رہنماوں نے پارٹی میں شمولیت کا گرین سگنل بھی دے دیا ہے۔


ذرائع کے مطابق ڈپٹی میئر نے حمزہ شہباز کے رویے سے تنگ آکر پارٹی چھوڑدی۔ پارٹی کے اندرونی ذرائع کے مطابق یونین کونسل 172 میں کونسلر کی سیٹ پر ہونے والے ضمنی الیکشن کی ٹکٹ دینا جھگڑے کی اصل وجہ بنی۔

 کونسلر غلام حسین کی وفات کے بعد ضمنی الیکشن کے لئے راحیل غلام حسین کو ڈپٹی میئر نے ٹکٹ دی جس کے بعد وسیم قادر دوروز تک اپوزیشن لیڈر سے وقت مانگتے رہے۔ ہنگامی بنیادوں پر ڈپٹی میئر کو مرکزی دفتر بلایا گیا جو چالیس رکنی وفد کے ہمراہ پہنچے تو اپوزیشن لیڈر کی طرف سے ان کی ایک نہ سنی گئی۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ تم کون ہوتے ہو ٹکٹ دینے والے جس پر ڈپٹی میئر نے جواب دیا کہ جناب کسی سے لیکر نہیں کھاتا، کام کرنے والے ورکر کو ٹکٹ دی، انہوں نے طعنہ دیا کہ پی پی 168 کے ضمنی الیکشن میں جس امیدوار کو آپ نے ٹکٹ دی وہ ہار گیا۔ اس پر حمزہ شہبازغصے میں آ گئے اور پانی کی بوتل ڈپٹی میئر کو دے ماری، جواب میں وسیم قادر نے بھی بوتل مار دی۔ بعد ازاں حمزہ شہباز نے وسیم قادر کو پارٹی میں بلیک لسٹ کر دیا۔ اس حوالے سے ڈپٹی میئر نے کہا کہ جب تک حمزہ شہباز خود نہیں بتائیں گے تب تک میں خاموش رہوں گا۔ اگر وہ حقیقت کو جھٹلائیں گے تو میں بتاؤں گا کہ مجھے کس بات کی سزا دی گئی ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎