نواز شریف کی بگڑتی طبیعت، حکومتی میڈیکل بورڈ نے بھی سابق وزیراعظم سے متعلق تشویشناک خبردیدی

سابق وزیر اعظم نواز شریف کا چند روز قبل جیل میں ڈاکٹروں کی ایک ٹیم نے طبی معائنہ کیا تھا جس میں امراض قلب کے ماہرین بھی شامل تھے


 میڈیکل بورڈ نے کوٹ لکھپت جیل میں قید نواز شریف کو اسپتال منتقل کرنے کی سفارش کر دی اور رپورٹ محکمہ داخلہ کو بھجوا دی۔نواز شریف دل سمیت مختلف امراض میں مبتلا ہیں۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ پنجاب حکومت کی جانب سے امراض قلب کے ماہرین پر قائم کردہ چھ رکنی میڈیکل بورڈ نے نواز شریف کی صحت سے متعلق رپورٹ محکمہ داخلہ کو بھجوا دی ہے۔

رپورٹ میں میڈیکل بورڈ نے نواز شریف کو اسپتال بھیجنے کی سفارش کر دی ،محکمہ داخلہ پنجاب سفارشات کی روشنی میں علاج کا فیصلہ کرے گا۔دو روز قبل کوٹ لکھپت جیل میں قید سابق وزیراعظم نواز شریف کا طبی معائنہ کیا گیا تھا۔ آرمڈ فورسز انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے سینئیر پروفیسرز ڈاکٹر بریگئڈیر عبد الحمید صدیق اور بریگیڈئر عظمت حیات، پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے پروفیسر شاہد حمید اور ڈاکٹر سجاد احمد، راولپنڈی انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیولوجی کے پروفیسر ڈاکٹر حامد شریف خان اور ڈاکٹر طلحہ بن نذیر پر مشتمل خصوصی میڈیکل بورڈ نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے کوٹ لکھپت جیل میں مختلف ٹیسٹ کیے۔

ڈاکٹرز نے نواز شریف کی ای سی جی اور بلڈ ٹیسٹ کے لیے سیمپل بھی لیے۔ ذرائع کے مطابق ڈاکٹرز نے سابق وزیراعظم نواز شریف سے ان کے دل کی بیماری اور جسم میں درد ہونے کا بھی پوچھا۔ میڈیکل بورڈ سے ہونے والی گفتگو کے دوران نواز شریف نے پٹھوں میں کھنچاؤ اور دل پر بھاری پن کی شکایت کی۔ بورڈ نواز شریف کی صحت سے متعلق سفارشات محکمہ داخلہ کو بھجوائی۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎