بغیرہیلمٹ موٹرسائیکل چلانے والوں کے خلاف شکنجہ مزید سخت، حکومت نے انتہائی سخت حکم جاری کردیا

محکمہ داخلہ پنجاب نے احکامات جاری کیے ہیں کہ بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکل چلانے والوں کی موٹر سائیکل بند کر دی جائے۔


ہیلٹ کے بغیر موٹر سائیکل چلانے والوں کے خلاف شکنجہ مزید سخت کرنے کی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔

خیال رہے کہ اس حوالے سے لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے بھی احکامات جاری کیے گئے تھے۔27 دسمبر 2018ء کو لاہور ہائیکورٹ کے جج جسٹس علی اکبر قریشی نے بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکل سواروں کو پٹرول فراہم کرنے والے پمپس کو سیل کرنے کا حکم دیا تھا ۔

سماعت کے دوران جسٹس علی اکبر قریشی نے کہا کہ پنجاب بھر میں بغیر ہیلمٹ کے موٹر سائیکل سواروں کو پٹرول فراہم نہ کیا جائے۔

عدالتی احکامات کی خلاف ورزی کرنے والے پٹرول پمپس کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔ قبل ازیں یکم دسمبر کو لاہور ہائیکورٹ نے یکم دسمبر سے موٹرسائیکل سوار دونوں افراد پر ہیلمٹ کی پابندی لازمی قرار دی تھی۔ موٹرسائیکل سواروں کے لیے پابندی عائد کی گئی تھی کہ وہ ہیلمٹ کے ساتھ سائیڈ مرر بھی لگائیں۔جبکہ لاہور اور راولپنڈی میں بغیر ہیلمٹ موٹرسائیکل سواروں کے خلاف کاروائی کا آغاز بھی گذشتہ برس دسمبر میں ہی کر دیا گیا تھا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎