نواز شریف کو جیل کے کمرے کی صفائی خود کرنے کی ہدایت

لاہور: سابق وزیر اعظم نواز شریف کو کوٹ لکھپت جیل میں ’بہتر کلاس‘ تو ملی ہے تاہم پنجاب حکومت کا کہنا تھا کہ وہ نواز شریف کے احکامات کو پورا کرنے کے لیے انہیں ایک قیدی نہیں دے سکتے اور انہیں اپنا کمرہ خود صاف کرنا ہوگا۔


انسپیکٹر جنرل جیل خانہ جات شاہد سلیم بیگ کا کہنا تھا کہ نواز شریف سے کہا گیا ہے کہ العزیزیہ اسٹیل ملز کیس انہیں میں ملنے والی 7 سال قید کی سزا کے دوران انہیں اپنا جیل میں کمرہ خود صاف کرنے ہوگا۔

گورنر پنجاب چوہدری سرور کے ہمراہ گورنر ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جیل کے سربراہ کا کہنا تھا کہ نواز شریف کا کیس انتہائی حساس تھا اور انہیں ان کے بیرک سے باہر جانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

جیل مینوئل کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ سابق وزیر اعظم سے ان کا کمرہ خود صاف کرنے کا کہا گیا ہے۔

تاہم بعد ازاں انہوں نے ڈان کو وضاحت دی کہ مینوئل کے مطابق بزرگ قیدیوں کو کسی حد تک راحت فراہم کی جاتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے جیل میں ہونے کے دوران کسی بھی قسم کا معاملہ پاکستان کے لیے بدنامی کا سبب بن سکتا ہے۔

پریس کانفرنس کے دوران گورنر پنجاب نے سندھ حکومت سے محاذ آرائی کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ وفاقی حکومت کسی سے محاذ آرائی نہیں چاہتی بلکہ تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ لے کر چلنا چاہتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’تحریک انصاف کا کسی صوبائی حکومت کو نکالنے کا ارادہ نہیں ہے‘۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت کا ماننا ہے کہ کرپشن نے ہمارے ریاستی اداروں کو تباہ کردیا ہے اور کوئی بھی ملک کرپشن کے کینسر کے خاتمے کے بغیر ترقی نہیں کرسکتا ہے۔

نیشنل فنانس کمیشن میں تمام وزرائے اعلیٰ کو شامل کرنے کے حوالے سے سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت تمام صوبوں کو ساتھ لے کر چلے گی اور چھوٹے صوبوں کا زیادہ خیال کیا جائے گا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎