نئے چیف جسٹس کے پہلے ہی فیصلے نے عوام کے دل جیت لیے

 نورمحمد کو بارہ سو گرام چرس رکھنے پر ساڑھے چار سال قید اور جرمانے کی سزا سنائی گئی تھی.


 

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے بطور چیف جسٹس پہلا فیصلہ سناتے ہوئے منشیات کے کیس میں گرفتار شخص کی سزا میں کمی کی درخواست مسترد کر دی میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ ایوان صدر میں حلف برداری کی تقریب کے بعد سپریم کورٹ پہنچے جہاں  انہیں کمرہ عدالت نمبر ایک میں تین فوجداری مقدمات کی سماعت کرنا تھی۔

چیف جسٹس نے بطور چیف جسٹس پہلا کیس نور محمد کی سزا میں کمی کا سنا اور عدالت نے منشیات کے کیس میں سزایافتہ نور محمد کی سزا میں کمی کی درخواست کو مسترد کردیا۔سپریم کورٹ نے قرار دیا کہ اس کیس کے گوا ہ سرکاری ملازمین تھے جن کا مجرم سے کوئی عناد نہیں تھا۔اس کیس میں نورمحمد کو بارہ سو گرام چرس رکھنے پر ساڑھے چار سال قید اور جرمانے کی سزا سنائی گئی تھی تاہم عدالت نے سزا میں کمی کی درخواست کو مسترد کردیا۔

واضح رہے جسٹس آصف سعید کھوسہ نے 26 ویں چیف جسٹس آف پاکستان کے عہدے کا حلف اٹھالیا۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے جمعہ کو ایوان صدر میں منعقدہ تقریب میں ان سے حلف لیا۔ حلف برداری کی تقریب میں وزیراعظم عمران خان،سپریم کورٹ کے جج صاحبان، وفاقی کابینہ کے ارکان، سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی، سروسز چیفس، گورنرز، وکلاء اور دیگر نمایاں شخصیات نے شرکت کی۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎