سنچورین ٹیسٹ: پاکستان ٹیم کے پاس سو سالہ ریکارڈ توڑنے کا نادرموقع

سنچورین میں جاری سیریز کے پہلے ٹیسٹ میچ میں پاکستان کی ٹیم جنوبی افریقہ کے خلاف دوسری اننگز میں بھی ناکامی سے دوچار ہوئی اور صرف 190رنز پر ڈھیر ہو گئی۔ لیکن قومی ٹیم پہلے ٹیسٹ میچ میں میزبان ٹیم کو شکست دے کر نئی تاریخ رقم کر سکتی ہے۔


جنوبی افریقہ نے اپنی پہلی اننگز میں 42رنز کی برتری حاصل کی تھی جس کے سبب پاکستان نے میزبان ٹیم کو میچ میں فتح کے لیے 149رنز کا ہدف دیا ہے۔

اگر پاکستانی ٹیم ایک آسان ہدف کا تعاقب کرنے والی جنوبی افریقی ٹیم کو آؤٹ کر کے میچ میں شکست دینے میں کامیاب ہو جاتی ہے تو وہ 100سال پرانا ریکارڈ توڑتے ہوئے نئی تاریخ رقم کر سکتی ہے۔

جنوبی افریقہ کی ٹیم 150 یا اس سے کم رنز کے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے گزشتہ 100 سال سے کوئی ٹیسٹ میچ نہیں ہاری لیکن پاکستانی ٹیم میچ میں فتح حاصل کر کے پروٹیز کو اس اعزاز سے محروم کر سکتی ہے۔

قومی ٹیم کے کپتان سرفراز کی ناکامیوں کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا اور جنوبی افریقہ کی وکٹوں پر بھی ان کا ابتر بیٹنگ کا سلسلہ جاری ہے۔

سرفراز میچ کی پہلی اننگز میں صفر پر آؤٹ ہوئے جبکہ دوسری اننگز میں بھی بدقسممتی نے ان کا ساتھ نہ چھوڑا اور ایک غیر ضروری شاٹ کھیلنے کی کوشش میں وہ کھاتا کھولے بغیر ہی وکٹوں کے کیچ دے بیٹھے۔

اس کے ساتھ ہی سرفراز احمد نے میچ میں ’صفر کا پیئر‘ حاصل کیا اور یہ بدترین ریکارڈ اپنے نام کرنے والے پاکستان کے چوتھے کپتان بن گئے۔

سرفراز سے قبل پاکستان کے جو تین کپتان ٹیسٹ میچ میں پیئر کا شکار ہوئے ان میں امتیاز احمد، راشد لطیف اور وقار یونس کے نام شامل ہیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎