ڈک ورتھ لوئس قانون کے تحت پاکستان اورافریقہ کے میچ کا فیصلہ ہوگیا

جنوبی افریقا نے مجموعی طور پر 187 رنز 2 وکٹوں کے نقصان پر بنائے جس کے بعد بارش کا آغاز ہوا تو کھیل روکنا پڑا


پاکستان اور جنوبی افریقا کے درمیان کھیلے جانے والا تیسرے ون ڈے میں ڈک ورتھ لوئس قانون کے تحت ساؤتھ افریقہ نے 13 رنز سے فتح اپنے نام کرلی۔

جنوبی افریقا نے 318 رنز کے ہدف کے تعاقب میں بیٹنگ کا آغاز کیا تو پروٹیز کی پہلی وکٹ 53 رنز پر گری جبکہ کوئن ٹن ڈی کاک 33 رنزبنا کر آؤٹ ہوئے۔

روکا ہینڈرکس 83 اور کپتان فاف ڈوپلیسی نے 40 رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔

ڈک ورتھ لوئس قانون کے تحت امپائز نے جنوبی افریقا کو فاتح قرار دیا یوں پانچ ون ڈے میچز کی سیریز میں ڈوپلیسی الیون کو 2 میچز کی برتری حاصل ہوگئی۔

بارش کے وقت جب کھیل روکا گیا تو جنوبی افریقا کو میچ جیتنے کے لیے 17اوورز میں 131 رنز درکار تھے۔

اس سے قبل سنچورین میں کھیلے جارہے 5 میچوں کی سیریز کے تیسرے مقابلے میں پاکستان نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور مقررہ 50 اوورز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر 317 رنز بنا ڈالے۔

پاکستان کی پہلی وکٹ محض 4 رنز پر گری جب فخر امام 2 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے، امام الحق اور بابر اعظم نے شاندار بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے ٹیم کے مجموعے میں 132 رنز کا اضافہ کیا۔

بابر اعظم 69 رنز بنا کر ڈیل اسٹین کا شکار بنے، ان کی اننگز میں 7 چوکے اور ایک چھکا شامل تھا، امام الحق نے ذمہ داری بیٹنگ کرتے ہوئے اپنی سنچری مکمل کی تاہم وہ 101 کے اسکور پر تبریز شمسی کی گیند پر وان ڈر ڈوسن کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے، یہ ان کے ون ڈے کیریئر کی 5 ویں سنچری تھی۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎