ن لیگ کو اچانک چودھری نثار کی یاد ستانے لگی، تمام لیگی رہنما حکومت کے خلاف یکجا ہونے لگے

نجی ٹی وی کے پروگرام  سے گفتگو میں سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء شاہد خاقان عباسی نے دل کی بات کہہ دی.


سینئر ن لیگی رہنماء شاہد خاقان عباسی بولے کہ چوہدری نثار سے رابطہ منقطع ہونا بدقسمتی ہے.ان کیلئے دروازے اب بھی کُھلے ہیں۔

 وہ پارلیمنٹ میں پارٹی کے نمبر ون سینئر لیڈر تھے، ان سے آخری بار الیکشن سے پہلے رابطہ ہوا تھا، ان کی اپنی مرضی، اپنی سوچ تھی، جماعت کے دروازے ان کیلئے ہمیشہ کھلے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ عبدالرزاق داؤد بتائیں کیا وہ ڈیسکون کمپنی کے بینی فیشل آنر نہیں، انہیں چاہئے کہ وہ مہمند ٹیم معاہدہ ختم کریں یا حکومتی عہدہ چھوڑیں، میری معلومات کے مطابق اب تک کنٹریکٹ سائن نہیں ہوا، بغیر ثبوت کسی پر الزام نہیں لگاؤں گا۔

ن لیگی رہنماء کا کہنا ہے کہ حکومت نے پارلیمنٹ کو مفلوج کردیا ہے، پارلیمنٹ میں عوامی مسائل پر بات نہیں ہورہی، حکومت پارلیمنٹ میں معیشت پر بحث کروائے، معیشت کی خرابیاں اور ان کو دور کرنے پر بات کی جائے۔

انہوں نے شیخ رشید کو سامنے بیٹھ کر بات کرنے کا چیلنج دیا، بولے کہ ایل این جی نہ لاتے تو توانائی بحران حل نہ ہوتا، جس کا کوئی تعلق نہیں ان افسران کو بلایا جارہا ہے، جسے مجھ پر الزام لگانا ہے لگادے، میں ملک میں موجود ہوں، بطور وزیراعظم میرے پاس 2 سرکاری طیارے تھے، اسحاق ڈار ملک سے باہر کس کے طیارے پر گئے، معلوم نہیں، کسی کے پاس میرے خلاف ثبوت ہیں تو مقدمہ درج کروا دے۔

وہ کہتے ہیں کہ ن لیگ نے کبھی ٹکراؤ کی سیاست نہیں کی، نواز شریف نے کہا ادارے آئین و قانون کے مطابق کام کریں، لوگ نواز شریف کے کاموں کو پسند کرتے ہیں، نواز شریف نے صبر و تحمل سے پیشیاں بھگتیں جلاوطنی کو قبول نہیں کریں گے، شہباز شریف کے بعد کوئی بھی پارٹی کا صدر ہوسکتا ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎