تحریک انصاف کی حکومت نے نئی مثال قائم کردی، حکومتی اراکین اور وزرا پر بڑی پابندی لگا دی

پاکستان تحریک انصاف کے وزرا اور حکومتی ارکان نے کفایت شعاری پالیسی اپنائی تاہم اب حکومت نے وزرا اور حکومتی ارکان کو سرکاری اسپتالوں سے علاج کروانے کی ہدایت بھی جاری کر دی ہے جس کی مثال پہلے کہیں نہیں ملتی۔


 پاکستان تحریک انصاف نے گذشتہ دور حکومت میں لیگی حکومت کے نمائندوں اور وزرا کو بیرون ملک علاج کروانے پر سخت تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔ پی ٹی آئی کے بر سر اقتدار آنے کے بعد عمران خان اور ان کی جماعت کے لیے کڑا امتحان تھا کہ اب وہ کیسے عوام کےٹیکس کے پیسوں کی بچت کرتے ہیں ، اقتدار میں آنے کے بعد وزیراعظم عمران خان نے عوام کے ٹیکس کے پیسوں کی حفاظت کرنے اور حکومتی وزرا اور ارکان کے اخراجات میں کمی کرنے کا اعلان کیا تھا جس پر انہیں خوب سراہا گیا ۔

تفصیلات کے مطابق ملک بھر کے ٹیچنگ اسپتالوں اور بنیادی مراکز صحت کی بہتری اور ان مراکز کی اپ گریڈیشن کے لئے وزیراعظم عمران خان کی کی نئی پالیسی جاری کر دی گئی ہے جس کے تحت صوبائی حکومتیں ،وفاقی و صوبائی وزرا، انتظامی مشینری ، عمل درآمد کی پابند بنا دی گئی ہیں۔

ذرائع کے مطابق وزیر اعظم کو پیش کردہ رپورٹ میں جنوبی پنجاب، اندرون سندھ، اوربلوچستان کے سرکاری اسپتالوں کی بابت شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے شہریوں کو علاج معالجہ کے حوالے سے درپیش مسائل کی نشاندہی کی گئی ۔ پورٹ کے بعد وزیراعظم نے وفاقی و صوبائی وزرا، حکومتی مشینری اور ان کے اہل خانہ کو بوقت ضرورت علاج معالجہ کے لئے سرکاری اسپتالوں سے رجوع کرنے کی پالیسی پیش کر دی جس کے تحت قرار دیا گیا کہ دعووں اور اعلانات کی بجائے عملی اقداما ت کرنا، اور خود اچھے کام کی ابتدا کر کے ہی دوسروں کے لئے مثال بننا حکومتی ترجیح ہے ۔

وزیراعظم عمران خان کی جانب سے جاری ہدایات میں کہا گیا کہ سرکاری اسپتالوں میں وفاقی و صوبائی وزرا اور ان کے اہل خانہ کے علاج معالجہ کے لئے جانے سے ان اداروں کی کارکردگی اور معیار بہتر بنانے میں مدد ملے گی اور تحفظات کا خاتمہ ممکن ہو گا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎