جو کام بڑے بڑے نہ کر سکے وہ اے بی ڈویلیئرز نے کر دکھایا

مارچ 2009ءمیں سر ی لنکن ٹیم پر حملے کے بعد سے پاکستانی ٹیم اپنے تمام ہوم میچز متحدہ عرب امارت میں کھیل رہی ہے


انہوں نے برطانوی نشریاتی ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ یہ محسوس کرتے ہیں کہ ان کے پاس پاکستان میں میچزکھیل کر دنیا کو پیغام دینے کا ایک موقع ہے،وہ کچھ سال پہلے وہاں جانے سے ہچکچا رہے تھے کیوں کہ سب خوفزہ تھے تاہم اب ان کے خیال میں یہ پاکستان جا کر میچز کھیلنے کا بہترین موقع ہے ۔

جنوبی افریقہ کے سابق کپتان اور مایہ ناز بلے باز اے بی ڈیویلیئرز نے امید ظاہر کی ہے کہ ان کے پاکستا ن میں میچز کھیلنے سے دنیا کے دیگر بہترین کھلاڑیوں کو بھی وہاں جانے کی تحریک ملے گی ۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ پاکستان میں میچز کھیل کر لطف اندوز ہونا چاہتے ہیں اور اس سے دنیا کو بھی پیغام جائے گا کہ پاکستان انٹر نیشنل کرکٹرز کے جانے کے لیے محفوظ ملک ہے۔

واضح رہے کہ اے بی ڈیویلیئر ز 9اور10مارچ کوپلان کے مطابق پاکستان سپر لیگ کے دو میچز لاہور میں کھیلے تو وہ پاکستان میں میچز کھیلنے والے نمایاں ترین غیر ملکی کھلاڑی بن جائیں گے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎